34 views
السلام علیکم
 ہے، قرآن و حدیث سے بھینس کی حلت نہیں ملتی، کیا یہ بات صحیح ہے کہ بھینس کو فقہ نے حلال کیا ہے؟
asked Dec 23, 2017 in متفرقات by Suhail Ahmad Qasmi

1 Answer

Ref. No. 39 / 875

الجواب وباللہ التوفیق                                                                                                                                                        

بسم اللہ الرحمن الرحیم:۔ قرآن کریم میں لفظ ”بقر“ استعمال ہوا ہے جس کے معنی گائے، بیل اور بھینس کے ہیں۔ یعنی لفظ بقر  کا اطلاق گائے ، بیل اور بھینس سب پر ہوتا ہے۔ اس لئے اس کا ثبوت قرآن سے ہی ہوا۔  البتہ فقہ نے اس کو باہر نکال کر مسئلہ کو واضح کردیا ہے۔   

    واللہ اعلم بالصواب

 

دارالافتاء

دارالعلوم وقف دیوبند

answered Jan 1 by Darul Ifta
...