30 views
اگر میں طواف وداع کئے بغیر واپس اپنے ملک آگیا تو کیا میرے لئے میری بیوی حلال ہوگی؟۔ یاکیا کرنا ہوگا؟
asked Jul 14, 2020 in حج و عمرہ by Rahimuddin

1 Answer

Ref. No. 1014/41-168

الجواب وباللہ التوفیق 

بسم اللہ الرحمن الرحیم:۔  اپنے وطن  واپسی کے وقت بیت اللہ شریف سے رخصت ہونے کے لیے جو طواف کیاجاتاہے اس کو طواف وداع کہا جاتا ہے۔ طوافِ وداع   آفاقی پرواجب ہے اور اس کا وقت طوافِ زیارت  کرنے کے بعد سےشروع ہو جاتا ہے ۔ اگر نفل کی نیت سے کوئی طواف کر لیا جائے تب بھی طوافِ وداع  اداہو جاتا ہے۔ لیکن اگر کوئی طواف وداع نہ کرسکے تو اس کے ذمہ دم دینا لازم ہوتا ہے۔  دم کا حدودِ  حرم میں ہونا ضروری ہے اور کسی دوسرے شخص کو  رقم دے کر حدودِ  حرم میں دم کی ادائیگی کروانابھی  جائز ہے۔  صورت مسئولہ میں آپ کی  بیوی آپ کے لئے حلال ہے۔

 وکل دم وجب علیه في شيء من أمر الحج والعمرة، فإنه لایجوز ذبحه إلا بمکة، أو حیث شاء من الحرم۔

واللہ اعلم بالصواب

دارالافتاء

دارالعلوم وقف دیوبند

answered Jul 14, 2020 by Darul Ifta
...