74 views
السلام علیکم و رحمۃ اللہ و برکاتہ کیا فرماتے ہیں علمائے کرام ومفتیان عظام مسائل ذیل کے بارے میں
ہمارےمحلہ میں ایک مسجد ہے جس میں دو امام مقرر ہے ایک امام جماعت اسلامی والو کی طرف سے مقرر کیا گیا ہے جو ظہر وعصر کی امامت کرتا ہے اور دوسرا امام تبلیغی جماعت والو نے مقرر کیا ہے جو مغرب عشاء اور فجر کی امامت کرتا ہے ابھی لاکڈاؤن میں ہماری مسجد میں دو جمعہ ہو رہے ہیں اور دونوں جمعہ ایک ہی جگہ محراب میں ہوتے ہیں اس کے متعلق کیا حکم ہے جمعہ ثانیہ درست ہے یا نہیں؟

پہلا جمعہ اس طرح ہوتا ہے کی امام اذان ثانیہ کے بعد اردو میں تقریر کرتا ہے اس کے بعد بیٹھ جاتا ہے اور پھر کھڑا ہو کر دوسرا خطبہ دیتا ہے تو اس کے متعلق کیا حکم ہے کی اذان ثانیہ کے بعد اردو میں تقریر کرنا کیسا ہے

دوسرا امام بولتا ہے کی ہمارے نزدیک پہلا جمعہ نہیں ہوتا اس کے متعلق تفصیل سے جواب تحریر فرمائے کی پہلا جمعہ ہوتا ہے یا نہیں دوسرا جمعہ کرنا چاہیے یا نہیں


المستفتی زعیم الدین سیفی دہلوی
asked Nov 16, 2020 in نماز / جمعہ و عیدین by Zaeem saifi

1 Answer

Ref. No. 1208/42-515

الجواب وباللہ التوفیق 

بسم اللہ الرحمن الرحیم:۔   واضح رہے کہ جب محلہ کی مسجد میں امام و مؤذن مقرر ہوں اور وہاں باقاعدہ اذان و اقامت کے ساتھ اہل محلہ جماعت کراچکے ہوں تو عام حالات میں مسجد کی حدود میں دوسری جماعت مکروہ تحریمی ہے۔

  مجمع الزوائد میں ہے : عن ابی بکرۃ ان رسول اللہ ﷺ اقبل من نواحی المدینۃ  یرید الصلوۃ فوجد الناس قد صلوا فمال الی منزلہ فجمع اہلہ فصلی بھم۔ (مجمع الزوائد، کتاب الصلوۃ دارالعلمیۃ بیروت 2/54)۔

 لیکن جہاں سخت مجبوری ہو جیساکہ موجودہ حالات میں کرونا کی وجہ سے حکومت کی پابندی کے پیش نظر ،تو فقہی قاعدہ  'الضرورات تبیح المحظورات' کی رو سے  دوسری جماعت کی گنجائش ہوگی۔ لیکن اس کا خیال رکھاجائے کہ دوسرا جمعہ امام اسی مصلی پر نہ پڑھائے بلکہ تھوڑا ہٹ کر کھڑا ہو۔ مذکورہ صورت میں دوسرے امام کا یہ کہنا کہ پہلا جمعہ نہیں ہوا یہ درست نہیں ہے۔

اردو تقریر اذان ثانیہ سے پہلے کرلینی چاہئے ، اذان ثانیہ کے بعد اردو تقریر کا عمل طریقہ  ماثورہ متوارثہ مسنونہ کے خلاف ہے۔  

واللہ اعلم بالصواب

دارالافتاء

دارالعلوم وقف دیوبند

answered Nov 23, 2020 by Darul Ifta
...