125 views
السلامُ علیکم
میرے لڑکے کا نکاح ہوا ہے تو اسکی بیوی کو میں  لے وہ لا ادھر آ اس طرح کے الفاظ استعمال کر سکتے ہیں؟
asked Dec 25, 2021 in آداب و اخلاق by Amin

1 Answer

Ref. No. 1753-43-1470

بسم اللہ الرحمن الرحیم:۔ کسی کو بلانے کے لئے ایسے الفاظ کا استعمال کرنا چاہئے جن میں پیار اور نرمی ہو، اور سننے والے کو برا محسوس نہ ہو، اگر بہو کو اس طرح بلانے سے اپنائیت کا احساس ہوتاہے تو اس طرح بلانے میں کوئی حرج نہیں ہے۔ اکثر لوگ  بے تکلف اس طرح بولتے ہیں اور سننے والے کو کوئی تکلیف نہیں ہوتی ہے بلکہ ایک گونہ اپنے پن کا احساس ہوتاہے ۔ اس لئے کوئی حرج نہیں ہے۔

عن علي بن أبي طالب قال: قال رسول الله - صلى الله عليه وسلم -: "إن الله رَفيق يحب الرفق، ويعطي علي الرفق ما لا يعطي علي العنف" (مسند احمد 1/552)

عن جرير بن عبد الله البجلي، قال: قال رسول الله - صلى الله عليه وسلم -: "من يحرم الرفق يحرم الخير" (سنن ابن ماجہ، باب الرفق 4/646)

عن عائشة، عن النبي - صلى الله عليه وسلم - قال: "إن الله رفيق يحب الرفق في الأمر كله" (سنن ابن ماجہ، باب الاحسان الی الممالیک 4/647)

عَنْ أَنَسٍ، عَنْ النَّبِيِّ -صلى الله عليه وسلم- قَالَ: "مَا كانَ الرِّفْقُ فِي شَيْءٍ قَطُّ إلاَّ زَانَهُ، ء وَلا كَانَ الْفُحْشُ فِي شيءٍ قَطُّ إِلاَّ شَانَهُ" (موارد الظمآن الی زوائد ابن حبان، باب ماجاء فی الرفق 6/187)

واللہ اعلم بالصواب

دارالافتاء

دارالعلوم وقف دیوبند

answered Dec 29, 2021 by Darul Ifta
...