119 views
علیکم۔ سوال عرض ہے کہ  غیر شادی شدہ عورت اور   شادی شدہ عورت دونوں کیلۓ بھؤں اور سر کے بال کے علاوہ چہرے اور  جسم کے تمام بال صاف کرنے کا کیا حکم ہے؟
کیا چہرے اور جسم کے بالوں کو لیزر کے ذریعے ہمیشہ کیلۓ صاف کیا جا سکتا ہے؟
رخسانہ اعجاز،
اتر پردیش، انڈیا
asked Oct 16, 2023 in زیب و زینت و حجاب by Rukhsana

1 Answer

Ref. No. 2635/45-3999

بسم اللہ الرحمن الرحیم:۔  عورت کے لئے  رخسار، بازو، گردن، ٹانگوں اور رانوں کے بال صاف کرنا مباح ہے، اسی طرح سینہ حلق اور پیٹھ کے بال بھی صاف کرنے کی گنجائش ہے،  البتہ ان بالوں  کو نوچ کرنکالنا مناسب نہیں۔ حسن کے لیے بھنویں بنانا (دھاگا یا کسی اور چیز سے) یا اَبرو کے اطراف سے بال اکھاڑ کر باریک دھاری بنانا جائز نہیں، اس پر حدیث میں لعنت وارد ہوئی ہے۔

"( والنامصة إلخ ) ذكره في الاختيار أيضاً، وفي المغرب: النمص نتف الشعر ومنه المنماص المنقاش اهـ ولعله محمول على ما إذا فعلته لتتزين للأجانب، وإلا فلو كان في وجهها شعر ينفر زوجها عنها بسببه ففي تحريم إزالته بعد؛ لأن الزينة للنساء مطلوبة للتحسين، إلا أن يحمل على ما لا ضرورة إليه؛ لما في نتفه بالمنماص من الإيذاء.  وفي تبيين المحارم: إزالة الشعر من الوجه حرام إلا إذا نبت للمرأة لحية أو شوارب فلا تحرم إزالته بل تستحب". (حاشية رد المحتار على الدر المختار (6/ 373)

واللہ اعلم بالصواب

دارالافتاء

دارالعلوم وقف دیوبند

 

answered Oct 30, 2023 by Darul Ifta
...