47 views
السلام علیکم۔ مفتی صاحب سوال عرض کے کہ ہر جگہ صبح شام ۱۰۰ مرتبہ سرود شریف، ۱۰۰ مرتبہ استغفار اور ۱۰۰ مرتبہ تیسرے کلمہ کا ورد سکھایا جاتا ہے۔ اسکی کیا شرعی حیثیت ہے؟؟ کیا اس تعداد میں یہ تین تسبیحات کا پڑھنا سنت رسول ہے؟ یہ تین تسبیحات کب سے شروع ہوئیں
asked Oct 1, 2023 in فقہ by abdulahad

1 Answer

Ref. No. 2668/45-4130

بسم اللہ الرحمن الرحیم:۔  قرآن واحادیث میں ذکر کی بڑی اہمیت وفضیلت بیان کی گئی ہے (یا ایہا الذین آمنوا اذکر اللہ ذکرا کثیرا) الآیۃ، لا یزل لسانک رطبا من ذکر اللہ (الحدیث)

صبح وشام ذکر کی بڑی فضیلت ہے۔ (فسبحان اللہ حسن تمسون وحین تصبحون) الآیۃ، متعدد احادیث سے درود شریف استغفار اور تیسرا کلمہ سو مرتبہ پڑھنے کا ثبوت ملتا ہے۔

عن الأغر المزنی وکانت لہ صحبۃ ان رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم قال انہ لیغان علی قلبی وانی لاستغفر اللہ في الیوم مائۃ مرۃ‘‘ (صحیح مسلم: رقم ٢٧٠٢۔

عن أنس بن مالک أن رجلا جاء الی النبی صلی اللہ علیہ وسلم فقال یا رسول اللہ انی رجل ذرب اللسان واکثر ذلک علی أہلی فقال رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم این انت من الاستغفار انی استغفر اللہ فی الیوم واللیلۃ مائۃ مرۃ‘‘ (المعجم الأوسط للطبرانی: رقم: ٣١٧٣)

عن عمرو بن شعیب عن أبیہ عن جدہ قال قال رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم من سبح اللہ مائۃ بالغداۃ ومائۃ بالعشی کان کمن حج مائۃ حجۃ ومن حمد اللہ مائۃ بالغداۃ ومائۃ بالعشی کان کمن حمل علی مائۃ فرس فی سبیلاللہ أو قال غزا مائۃ غزوۃ۔ ومن ہلل اللہ مائۃ بالغداۃ ومائۃ بالعشی کان کمن اعتق مائۃ رقبۃ من ولہ اسماعیل ومن کبر اللہ مائۃ بالغداۃ ومائۃ بالعشی لم یأت في ذلک الیوم أحد بأکثر مما أتی الا من قال مثل ما قال أو زاد علی ما قال۔ (سنن الترمذی: رقم: ٣٤٧١)

عن الحسن قال قال رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم لأبي بکر ألا اولک علی صدقۃ تملأ ما بین السماء والأرض سبحان اللہ، والحمد اللہ، ولا الہ الا اللہ، واللہ اکبر، ولا حول ولا قوۃ الا باللہ في یوم ثلاثین مرۃ‘‘ (المصنف لابن أبي شیبۃ: رقم: ٣١٧١١)

عن أنس بن مالک قال قال رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم من صلی علی فی یوم ألف مرۃ لم یمت حتی یری متعدہ من الجنۃ‘‘ (الترغیب لابن شاہین: رقم ١٩)

عن جابر قال قال رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم من صی علی في کل یوم مائۃ مرۃ قضی اللہ لہ مائۃ حاجۃ سبعین منہا لأخرتہ وثلاثین منہا لدنیاہ‘‘ (جلا الافهام لإبن القيم الجوزية: ص: 430)

عن جابر بن عبد الله قال قال رسول الله صلي الله عليه وسلم من صلي علي مائة صلاة حين يصل الصبح قبل أن يتكلم قضي الله له مائة حاجة عجل له منها ثلاثين حاجة وأخر له سبعين وفي المغرب مثل ذلك‘‘ (جلاء الافهام لابن القيم: ص: 430، دار العروبه، الكويت)

واللہ اعلم بالصواب

دارالافتاء

دارالعلوم وقف دیوبند

 

answered Nov 20, 2023 by Darul Ifta
...